Type to search

تلنگانہ

اردو کے فروغ میں تمام تنظیمیں متحدہوکرکام کریں اردواکیڈیمی کوبھی متحرک ہونے کی ضرورت

اردو کے فروغ

سمینارسے اسکالرس اورماہرین کی مخاطبت


حیدرآباد:23مارچ(پریس نوٹ) آصف کلچرل سوسائٹی اور این سی پی یوایل کی جانب سے ایک سمینار بعنوان اردو ذریعہ تعلیم اورہماری ذمہ داریاں ذیمر اے بی سی حال وجئے نگر کالونی میں منعقدکیاگیا اوراس موقع پر جناب اعجازعلی قریشی ایڈوکیٹ صدرمانوالمونی اسوسی ایشن نے مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ آج مادری زباں والے بھی اپنی زبان کواہمیت دئیں اوراردو کے فروغ کے لیے ہم خود آگے آنے کی ضرورت ہے۔ اگر ہم خوداپنی زبان کی حفاظت نہیں کرئینگے تودوسروں پربھروسہ کرنا بے کار ہے۔ اوراردو اساتذہ کی ذمہ داریاں ہے کہ وہ اردو زبان کے فروغکے لیے جدوجہد کرئیں اوراس پروگرام سے پروفیسر عبدالقدوس نے بھی مخاطب کیا اور انہوں نے کہاکہ اب جب کہ حکومت ملازمت کے اعلان کرنے والی ہے ہم اس کی تیاری اب سے بھی شروع کرئیںاور جناب م ق سلیم نے بھی مخاطب کرتے ہو ئے کہاکہ اردواکیڈیمی بھی اردو کے فروغ میں ذمہ دارہے وہ اردو کے فروغ کے لیے آگے آئیں نہ کہ چندایک کتابیں طباعت کرکے اپنے فرائض سے سبوک دوش ہوجائے ۔

ڈاکٹر مختار احمد فردین نے بھی مخاطب کیا اوراردو کے فروغ کے لیے تمام کومل کرکام کرنے کی بات کہی۔ محمدعبدالرب انصاری نے کہاکہ تمام انجمن مل کرمتحدہوکرایک جذبہ کے تحت کام کرئیں ار اردو کوفروغ دئیں اب جب کہ حکومت انگلش میڈیم اسکول کھولنے جاری ہے اس میں اردو مدارس کانقصان ہوسکتا ہے ۔ اورمتحرمہ ناہیدنے کہاکہ ہم سب مل کراردو کے کارواں ہے ۔ ڈاکٹرمحمدساجدنے کہاکہ اس طرح کے سمینار ایک اچھی خدمات ہے اورمحمدو قارالدین علی خان اورمحمدتمیزالدین ‘ محمد بشیرعلی ‘ محمد کریم خان ‘ ظہرالدین سلیم نے بھی مخاطب کیا اوراس سمینار کے بعد مشاعرہ کاآغاز ہوا جس کی صدارت یوسف روش نے کی اورمحمدظہورظہیرآبادی کے علاوہ محمدجہانگیر قیاس اورروزاق تشکیل ‘ حیدرشکیل نے مشاعرہ کی کارروائی چلائی اورآخرمیں محمدایوب خاں نے تمام کاشکریہ اداکیا۔