Type to search

وائرل

یہ 25 سالہ لڑکی رہتی ہے بچوں کی طرح، پہنتی ہے ڈائپر اور گڑیوں کے ساتھ گذارتی ہے پورا دن

وائرل ڈسک،28فروری(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) اس دنیا میں ہر طرح کے لوگ ہے اور ہر کوئی اپنے طریقے سے جینا چاہتاہ ے- ایسی ہی ایک 25 سال کی لڑکی ہے جو انٹرنیٹ کے ذریعہ اپنی عجیب غریب اسٹائل سے پوری دنیا کو روبرو کراتی ہے- جی ہاں، یہ لڑکی بالغ ہونے کے باوجود اپنی مرضی سے کسی چھوٹے بچوں کی طرح زندگی جی رہی ہے-

25 سال کی پیج ملر اے بی ڈی ایل کمیونٹی سے ہے- اے بی ڈی یل یعنی کہ بالغ بے بی ڈائپر لور، جی ہاں، اے بی ڈی ایل وہ لوگ ہے جنہیں بالغ ہونے کے باوجود ڈائپر پہننا پسند ہے- پیج ملر بالکل کسی چھوٹے بچے کی طرح زندگی جی رہی ہے اور ہر مہینے ڈائپر پر قریب 21 ہزار روپے خرچ کرتی ہے-

مرر کے مطابق صبح ہونے کے ساتھ پیج ملر اپنے پولین سے اٹھتی ہے اور سب سے پہلے ڈائپر بدلتی ہے اسکے بعد پیج ملر پورا دن کھیلونے سے کھیلتی ہے اور اپنے فالوورس کے لیے آن لائن کنٹینٹ بناتی ہے، مرر آن لائن کے مطابق انکے پاس خود کی سبسکرپشن سرویس ہے، جو کہ اے بی ڈی ایل کمیونٹی سے متعلق ہے- سبسکرپشن سے ملنے والے پیسے سے پیج ملر اپنا خرچ چلاتی ہے-

بچے کی طرح زندگی گذارنے کے فیصلے پر خاندان کا ردعمل پوچھنے پر انہوں نے کہا، میں ہمیشہ سے ہی کھیلونے جمع کرتی تھی اور میرا سینس آف ہیومر بھی ویسا ہی تھا- ایسے میں میرے خاندان اور سبھی دوستوں نے مجھے قبول کیا- اگر آپ خود ہی ایسے جتاؤ کہ یہ کوئی بڑی بات نہیں ہے تو لوگ بھی آپ کو ویسے ہی لیتے ہیں-

دراصل اے بی ڈی ایل کمیونٹی کے بارے میں آن لائن ریسرچ کرنے کے بعد پیج ملر نے مئی 2018 میں بچے کی طرح رہنے کا فیصلہ کیا تاکہ اسی طرح کی سوچ رکھنے والے لوگوں کے لیے ایسی لائف اسٹائل میں رہنا آسان ہوسکے- پیج ملر کہتی ہے، لوگوں کو اس طرح کی لائف اسٹائل جینے میں شرم آتی ہے اس لیے میں نے فیصلہ کیا کہ عوام کے درمیان جاؤنگی، میں نے یوٹیوب چینل اور ویب سائٹ بنائی- کس طرح آپ اپنی بالغ زندگی کو بیسٹ طریقے سے بچے کی طرح جی سکتے ہیں- یہ سب اسی کے بارے میں ہے-

اپنی کمیونٹی کے بارے میں بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا، ہم ہے تو بالغ ہی تو ہمیں اپنے کلبس بھی بھرنے پڑتے ہیں، لیکن ہمارے اوپر اپنی لائف اسٹائل کو بنائے رکھنے اور مینٹن کرنے کی اضافی ذمہ داری بھی ہے-
وہ کہتی ہیں، ہمیں کھلونوں سے کھیلنا پسند ہے، میں پولی پیکٹ اور باربی کلکٹ کرتی ہوں، مجھے اپنے سافٹ ٹوائز سے کھیلنا اچھا لگتا ہے-

وہ کہتی ہے کہ کئی لوگ اس لائف اسٹائل کی وجہ سے انکی ذہانت پر شک کرتے ہیں، انکے مطابق وہ پوچھتے ہیں کہ ایک نارمل ذہین اس طرح کیوں رہے گا- میں بچوں کی طرح کپڑے بھلے ہی پہنتی ہوں لیکن میں دودھ کی بوتل نہیں پتی، جب میں عوام میں ہوتی ہو تو الگ طریقے سے برتاؤ کرتی ہوں-