Type to search

تعلیم اور ملازمت

ایم ایس کرئٹیو اسکول کے طلباء کو نیشنل سائنس اولمپیاڈ میں 159 گولڈ میڈلز

ایم ایس کے طلباء نے قومی سطح کے تعلیمی مقابلہ میں حاصل کی ایک اور شاندار کامیابی


حیدرآباد۔ 20 جنوری (پریس نوٹ) معروف تعلیمی ادارے ایم ایس نے تعلیمی مسابقت کے میدان میں قابل ذکر کامیابی حاصل کی ہے۔ ایم ایس کرئیٹیو اسکول کے طلباء نے ایک بار پھر اپنی غیر معمولی صلاحیتوں کا مظاہرہ ہوئے نیشنل سائنس اولمپیاڈ  2023-24 میں 159 گولڈ میڈلز حاصل کئے۔

نیشنل سائنس اولمپیاڈ ، سائنس اولمپیاڈ فاؤنڈیشن (ایس او ایف) کے زیر اہتمام  قومی سطح کا ایک سالانہ مقابلہ ہے جو  طلباء کی فطری  اور سائنسی  صلاحیتوں کو جانچنے کے لیے ایک پلیٹ فارم کے طور پر کام کرتی ہے۔ یہ مقابلہ، قومی تعلیمی پالیسی (این ای پی) کےعین مطابق اہم مسائل کے حل، تنقیدی سوچ، اور طالب علموں میں استدلال کی صلاحیتوں کو فروغ دینے میں سہولت فراہم کرتا ہے۔

 

نیشنل سائنس اولمپیاڈ کاقومی سطح پر ٹسٹ کا انعقاد ڈسمبر 2023 میں کیا گیا تھا جس میں ایم ایس کریٹیو اسکول کےشہر حیدرآباد کی مختلف شاخوں سے 975 طلباءنے حصہ لیا تھا ان میں سے 159 طلباء نے اپنے تجزیاتی، حسابی، ریاضی، اور برابلم سالونگ کی صلاحیت کا مظاہرہ کرتے ہوئے، گولڈ میڈلس حاصل کرنے میں کامیابی حاصل کی۔

 

ایم ایس ایجوکیشن اکیڈیمی کے چئیرمین محمد لطیف خان نے ان طلباء کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ یہ کامیابی ایم ایس کے طلباء اور اساتذہ دونوں کی لگن اور محنت کا منہ بولتا ثبوت ہے۔

 

 

 

اس کے علاوہ ہمیں یہ اعلان کرتے ہوئے خوشی ہو رہی ہے کہ ہمارے ان غیر معمولی طلباء میں سے 16 نے اگلے ایڈوانس مرحلے، لیول 2 کے امتحانات کے لیے کوالیفائی کر لیا ہے، یہ ایک قابل ذکر کارنامہ ہے جو ان کی تعلیمی فضیلت سے وابستگی کو ظاہر کرتا ہے۔

 

 

جن 16طلباء نے امتیاز حاصل کرتے ہوئے  لیول ٹو تک رسائی حاصل کی  ان میں آسیہ خاتون ،منہا ریناز، سمیہ فاطمہ،عمامہ ارم، امت  الرحیم، مدیحہ خان، محمد سعد یزدانی، عماد علی، عبدالمقیت محمد، عمامہ زماں، زہرہ عبدالغفار، سمرہ احمد، فاطمہ داریہ،لودھی عاصمہ فاطمہ خان،علینہ فاطمہ، عفیفہ فاطمہ شامل ہیں۔

ایم ایس ایک ایسا تعلیمی ادارہ ہے جہاں روایتی تعلیم سے ہٹ کرطلباء کی غورو فکر اور سیکھنے کی صلاحیتوں کو فروغ دینے، ان کی اہلیت کو بڑھانے، اور ان میں عالمی معیار کے شہریوں کی خصوصیات پیدا کرنے کے لیے پروان چڑھایا جاتا ہے۔

Tags:
Ayub Khan

Ayub Khan, MA (MCJ) MANUU, Managing Editor of Urdu Post, CEO of MAKS Media.

  • 1

You Might also Like